Home

میں وہ شاعر تها کہ الفاظ میری باندی تهے

میرے مضمون بیاں کرتے تهے سربستہ راز
ان پہاڑوں کے، نظاروں کے، کہن سالہ راز
زیست کے، موت کے، افلاک کے، پیچیدہ راز
صبح کے، شام کے، ہر رات کے، خوابیدہ راز

میں وہ شاعر تها کہ الفاظ میری باندی تهے

میں نے چاہا جو لکها، لکهتا گیا، لکهتا گیا
ہاں مگر ایک خلش، ایک خلش، ایک خلش

وہ جو اک بات کبهی تم سے بیاں کرنی تهی…

– عاطف علی

Advertisements

5 thoughts on “بےربط نظم

  1. واہ کیا بات ہے ۔۔۔ھاں مگر ایک خلش ایک خلش ایک خلش۔۔وہ جو ایک بات کبھی تم سے بیاں کرنی تھی ۔۔۔ اللہ اور اچھا لکھنے کی توفیق دے میں نے آج تک کبھی کسی شاعری کے ساتھ اسطرح سے relate نہیں کیا ماشاللہ بہت خوب

    Like

  2. مجهے آپکی نئی تحریر کا انتظار رہے گا. … خدا آپ کو مزید نکھار سے لکهنے کا ہنر عطا کرے آمین. …..(پورانے روایوں کی میں معذرت چاہتی ہوں)

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s